4

آئین پاکستان میں عقیدے یا مذہب کی بنیاد پر کوئی تفریق روا نہیں رکھی گئی.ڈپٹی کمشنر ساہیوال

Spread the love

ساہیوال (63نیوز ساہیوال)ڈپٹی کمشنر محمد زمان وٹو نے کہا ہے کہ آئین پاکستان میں عقیدے یا مذہب کی بنیاد پر کوئی تفریق روا نہیں رکھی گئی اور پاکستان میں موجود غیر مسلم برادری ملک کی محب وطن شہری ہیں جن کے ساتھ کسی بھی قسم کا تعصب اسلامی فقہ کی رو سے جائز ہی نہیں ہے ۔وہ یہان اپنے دفتر میں بین المذاہب ہم آہنگی کمیٹی اور ضلعی امن کمیٹی کے اجلاس سے خطاب کر رہے تھے ۔ اس موقع ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر کیپٹن (ر)محمد علی ضیاء،ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر جنرل محمد فاروق اکمل اور کمیٹیوں کے عہدیداران سید ضیا ءاللہ شاہ بخاری ، مولانا محمد حسن معصومی ،شیخ اعجاز احمد رضا اورایلڈر دلبر جانی کے علاوہ مختلف پادری حضرات و اراکین کی کثیر تعداد بھی موجود تھی ۔انہوں نے کہا کہ ساہیوال بین المسالک اور بین المذاہب تعلقات کے حوالے سے ایک مثالی شہر ہے جس کیلئے تمام مکتبہ فکر حضرات کی بھرپور کاوشیں ہیں جنہیں نظر انداز نہیں کیا جا سکتا ۔انہوں نے کہا کہ سماجی رویے بہتر کرنے کیلئے علمائے کرام ایک اہم کردار ادا کر رہے ہیں جسے مزید بڑھانے کی اشد ضرورت ہے اور غیر مسلم برادریوں کے ساتھ غیر متعصب رویے کیلئے انہیں مزید آگے بڑھنا ہوگا ۔ڈپٹی کمشنر محمد زمان وٹو نے مزید کہا کہ تمام مسالک اور مذاہب کے مکتبہ فکر کے لوگوں کی خوشی اور غمی میں شرکت کر کے باہمی اجنبیت کو بآسانی ختم کیا جا سکتا ہے جس کیلئے ساہیوال کے تمام مذاہب کے اکابرین کی خدمات ناقابل فراموش اور دوسروں کیلئے مشعل راہ ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ نفرت اور انتشار پسند رویے ملکی و عالمی امن کیلئے شدید خطرہ ہیں جنہیں دوسروں کے عقائد کا احترام کر کے کافی حد تک کم کیا جا سکتا ہے ۔ڈی پی او ساہیوال محمد علی ضیا ءنے اپنے خطاب میں کہا کہ پاکستان تمام مذاہب کیلئے ایک مکمل محفوظ ملک ہے جہاں تمام انسانوں کو برابری کے حقوق حاصل ہیں کیونکہ آئین کے مطابق تمام مذاہب اور مسالک کے لوگ برابر کے پاکستانی شہری ہیں ۔اجلاس میں عیدالضحےٰ کے انتظامات کا بھی تفصیلی جائزہ لیا گیا ۔ کمیٹیوں کے تمام اراکین کے ضلعی انتظامیہ کو اپنے مکمل تعاون کا یقین دلایا جس پر ڈپٹی کمشنر ساہیوال محمد زمان وٹو نے ممبران کی گرانقدر خدمات کو واضح الفاظ میں سراہا ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں