5

15٫16 اگست کو ملک گیر شٹر ڈاؤن ہڑتال

Spread the love

اسلام آباد ( شاہدمحمود)مر کزی تنظیم تاجران پاکستان کے صدر محمد کاشف چوہدری نے اعلان کیا ہے کہ ملک بھر کے تاجر طبقے نے حکو مت کی معاشی پالیسیوں اورتاجر دشمن ٹیکس سسٹم اور بجٹ کے تمام متنازعہ امور کے خلاف 15،16اگست اور 26،27اگست کو ملک بھر کی تاجر تنظیموں نے ملک گیر شٹر ڈاون ہڑتال کا فیصلہ کیا ہے ،انھوں نے کہا ہم نے 32 نکاتی چارٹر آف ڈیمانڈ حکومت کے حوالے کیا،مگر معیشت و حالات میں بہتری کی ھماری کوششوں کی شنوائی نہ ہو نے پر 13 جولائی کوہم نے ملک گیر شٹرڈاون ہڑتال کی کال دی،کراچی سے خیبر تک ہر طرح کی حکومتی کوششوں کے باوجود تاریخ ساز شٹر ڈاون ھڑتال کے زریعے تاجر طبقہ نے حکومتی معاشی پالیسیوں پر عدم اعتماد کا اظہار کیامگر حکومت کے اندھے، بہرے، گونگے پن و طاقت کے گھمنڈ،فکس ٹیکس نظام لانے کے صرف زبانی جمع خرچ،چھوٹے تاجروں کیلئے کھاتے و حساب کتاب رکھنے اور سیلز ٹیکس رجسٹریشن،خرید و فروخت پر شناختی کارڈ کے اندراج کی شرط کے خاتمے،آسان ٹیکس سسٹم جیسے جائز مطالبات تسلیم نہ کیئے جانے پر ہم نے فیصلہ کیا ھے کہ ملک بھر کے تاجرخرید و فروخت پر شناختی کارڈ نہیں دینگے،ایف بی آر کی ٹیموں کے مارکیٹوں میں آنے پر انکا گھیرا¶ کریں گے،۔ان خیالات کا اظہار انھوں نے ملک بھر کی تاجر تنظیموں کے نمائندوں کے ہمراہ اسلام آباد میں پر یس کانفرنس سے خطاب کر تے ہو ئے کیا ۔اس موقع پرمرکزی تنظیم تاجران پنجاب کے صدر محمد شر جیل میر ، شیخ سلیم ،ملک ظہیر ، اشفاق عباسی ،خواجہ خلیل سالار،راجہ جاوید اقبال ، راجہ فیاض گل،آفتاب عباسی ،عتیق جنجوعہ ،ملک عبدالرحمن، محمد اظہر ،راجہ حسن اختر ،سجاد عباسی ، سردار ظہیر ،حاجی ظفر ،شاہد عباسی ،ملک عارف ، چوہدری اقبال ،خواجہ مشتاق ،راجہ ضیا ءاحمد، زاہد قریشی اور دیگربھی مو جو د تھے ۔
کاشف چوہدری نے کہا حکومتی ہٹ دھرمی اور ضد سے احتجاج،دھرنے،شٹرڈاون،غیر معینہ مدت کا لاک ڈاون،صنعتوں کی بندش سے حکومتی آمدن کم،بےروزگاری مہنگائی و غربت میں مزید اضافے سے انتشار بڑھے گا،پاکستان کے لاکھوں تاجروں اور چھوٹی صنعتوں کی واحدملک گیر نمائندہ مرکزی تنظیم تاجران پاکستان یہ سمجھتی ہے کہ قرضوں کے بھاری حجم،سود کی قسطوں کی ادائیگی،آمدن و اخراجات میں عدم توازن،سیاسی و معاشی عدم استحکام، مسلسل کساد بازاری، ڈالر کی اڑان، اسٹیک ہولڈرز کی مشاورت کے بغیر آئی ایم ایف کی ہدایات پر بجٹ کی تیاری،پیچیدہ اور مشکل نظام کے ذریعے ہر سطح پر بھاری بھر کم ٹیکسز کے نفاذ،پیداواری لاگت میں اضافے نے ملکی صنعتوں کے سست روی سے چلتے پہیے کو بند اور مارکیٹوں کوویران و سنسان کر دیا ہے۔انھوں نے کہا تاجر طبقہ بحیثیت پاکستانی پوری قوم کے ساتھ ان ڈائریکٹ ٹیکسز ادا کر رہاہے،مگر حکومتوں کی پالیسیوں،ایف بی آر کے کرپٹ نظام،طاقتور اور کمزور کیلئے قانون کی الگ تشریح کے باعث ڈائریکٹ ٹیکسز کی شرح تھوڑی اور فائلر کی تعداد کم ھے،ایف بی آر کے فائلر کو چور کہنے،مسلسل تنگ کرنے،رشوت و کرپشن نے عدم اعتماد کی فضا کو پروان چڑھایا۔ان حالات میں ہم نے حکومت کو یہ مشورہ دیا کہ ریاست کے نظام پر اعتماد کی بحالی،ایف بی آر کے ڈھانچے میں بنیادی تبدیلیوں کے بغیر اضافی آمدن کا ہدف حاصل کرنا ممکن نہیں، فائلرز کی تعداد اور آمدن میں اضافے کیلئے ہم نے سادہ اور آسان نظام تجویز کیا کہ ملک بھر میں بجلی اور گیس کے کمرشل میٹر رکھنے والے کو فائلر بنا دیا جائے اس طرح فوری طور پر فائلرز کی تعداد تیس لاکھ سے بڑھ جائے گی، ان فائلرز اور ملک بھر کے بازاروں میں موجود چھوٹے تاجروں کیلئے نمائندہ تاجر تنظیمات کی مشاورت سے کاروباروں کی نوعیت و حجم کے اعتبار سے کیٹگری وائیزفکس ٹیکس سسٹم متعارف کروایا جائے،جس کیلئے اردو میں آسان سادہ فارم کے زریعے بنکوں میں ٹیکس جمع کیا جائے تاکہ ایف بی آر کی مداخلت اور خوف ختم ہو سکے،جبکہ ہول سیلر،ڈسٹری بیوٹر،آڑھتیوں کیلئے ٹرن اوور ٹیکس کی بجائے انکی شرح منافع پر ٹیکس وصول کیا جائے،اسی طرح سیلز ٹیکس کو ویلیو ایڈڈ ٹیکس کی شکل میں امپورٹ سے لیکر ریٹیلر تک ہر سطح پر نافذ کرنے کی بجائے سمندری و خشکی کے راستے امپورٹ اور مینوفیکچرنگ کی سطح پر نافذ کیا جائے مگر ان سطحوں پر اسمگلنگ،انڈر انوائسنگ،چوری و کرپشن کا مکمل خاتمہ یقینی اور طریق کار آسان بنایا جائے،ملک کی لاکھوں دکانوں کوناممکن طویل ڈاکومینٹیشن میں ڈالنے کی بجائے ان چند جگہوں سے سیلز ٹیکس مکمل طور پر جمع ہو کر حکومتی خزانے میں جانے سے اہداف کا حصول ممکن ہو سکتا ہے،محمد کاشف چوہدری نے کہا اس طریق کار کے نفاذ سے فائلرز کی تعداد میں اضافہ،شناختی کارڈ لکھنے کی بے مقصد شرط کا خاتمہ،چھوٹے تاجر کو وودہولڈنگ ایجنٹ بنانے سے نجات،نچلی سطح تک سیلز ٹیکس کی پیچیدگیوں سے چھٹکارا،کرپشن و رشوت کا سدباب،اور آسان و سادہ نظام کے زریعے آمدن میں اضافہ ممکن ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں