6

چیچہ وطنی ماڈل کورٹ میں پہلے مقدمہ قتل کا فیصلہ ملزمان بری جبکہ مدعی مقدمہ اور گواہ کے خلاف جھوٹی شہادت دینے پر قانونی کارروائی کا حکم

Spread the love

چیچہ وطنی ماڈل کورٹ میں پہلے مقدمہ قتل کا فیصلہ ملزمان بری جبکہ مدعی مقدمہ اور گواہ کے خلاف جھوٹی شہادت دینے پر قانونی کارروائی کا حکم

سپریم کورٹ آف پاکستان کے احکامات کی روشنی میں ماڈل کورٹ چیچہ وطنی کے جج رانا خلیل احمد خاں ایڈیشنل سیشن جج نے پہلا مقدمہ قتل کا فیصلہ سنا دیا ملزمان کو باعزت بری کر دیا جبکہ مدعی مقدمہ اور گواہ کے خلاف جھوٹی شہادت دینے پر قانونی کارروائی کا حکم دے دیا.

تفصیلات کے مطابق چیچہ وطنی تھانہ شاہکوٹ کے نواحی گاؤں 22 چودہ ایل کے رہائشی محمد یار نے ایک استغاثہ زیر دفعہ 302 ت پ برخلاف گلشیر وغیرہ دائر کیا جس میں مدعی محمد یار نے موقف اختیار کیا کہ ملزمان نے میری 19 سالہ بیٹی صائمہ بی بی کو سال 2017 میں ملزمان نے اغوا کر کے قتل کر دیا جس کے مقدمہ درج ہوا پولیس نے تفتیش میں ملزمان کو بے گناہ قرار دیا مدعی نے عدالت میں استغاثہ دائر کیا جرم ثابت نہ ہونے پر معزز جج ماڈل کورٹ چیچہ وطنی رانا خلیل احمد خاں ایڈیشنل سیشن جج نے ملزمان کو باعزت بری کر دیا جبکہ مدعی مقدمہ اور گواہ کے خلاف جھوٹی شہادت دینے پر قانونی کارروائی کے لئے علاقہ مجسٹریٹ کو احکامات جاری کئے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں