9

تین اضلاع کو ملانے والا دریائے سکھ بیاس کا پُل خستہ حالی کا شکار ٹریفک حادثات معمول بن گئے

سکندرچوک ( نمائندہ خبریں) “خونی پُل” تین اضلاع کو ملانے والا دریائے سکھ بیاس کا پُل خستہ حالی کا شکار ٹریفک حادثات معمول بن گئےکوئی بڑا سانحہ رونما ہو نے کاخدشہ اہلیان علاقہ کا حکام بالا سے نوٹس لینے کا مطالبہ، تفصیلات کے مطابق سکندر چوک سے چند کلو میٹرکے فاصلہ پر بونگہ حیات ساہیوال روڈ پر دریائے سکھ بیاس کا خستہ حال پُل موجود ہے جو کہ اب ” خونی پُل” کے نام سے مشہور ہو چکا ہے حفاظتی جنگلے ٹوٹ پھوٹ کا شکار ہونے کی وجہ سے اب تک کئی ٹریفک حادثات رونما ہو چکے ہیں اور کسی بھی وقت کوئی بڑا سانحہ رونما ہو سکتا ہے اورپکے شروع میں ضلع پاکپتن کی حدود ہے تو پل کراس کرتے ہی ضلع اوکاڑہ کی حدود شروع ہو جاتی ہے اور چند کلو میٹر پر ہی ضلع ساہیوال کا ایریا آ جاتا ہے اس طرح تین اضلاع کے سنگم میں واقع ہونے اور ان کو ملانے والا خستہ حال پُل حکام بالا کی خصوصی توجہ کا منتظر ہے اہلیان علاقہ نےمنتخب عوامی نمائندوں اور کمشنر ساہیوال ڈویژن سےدریائے بیاس کے پُل کی از سر نو تعمیر کا مطالبہ کیا ہے تا کہ آۓ روز ہونے والےخطرناک ٹریفک حادثات سے بچا جا سکے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں