35

ساہیوال.ایم ایچ سی ٹیکنالوجی سینئرٹیکنیشنر زکے مسائل کوفی الفورحل کیاجائے۔

Spread the love
  • 3
    Shares

ساہیوال.ایم ایچ سی ٹیکنالوجی سینئرٹیکنیشنر زکے مسائل کوفی الفورحل کیاجائے۔2011کے سروس سٹرکچرنوٹیفکیشن پر عملدرآمد کروایاجائے۔پنجاب کے11پبلک ہیلتھ نرسنگ سکولزکی ایم سی ایچ ٹیکنیشنرزکاسروس سٹرکچرمقامی ادارہ کی سطح پردیاجائے۔ان خیالات کااظہار یہاں آل پنجاب ایم سی ایچ ٹیکنیشنرزکے زیراہتمام ہونیوالے اجلاس میں کیاگیاجس میں لاہور‘فیصل آباد‘ساہیوال‘خانیوال‘ملتان‘وہاڑی‘بہاولپور‘بہاولنگر‘سیالکوٹ ‘گجرات‘نارووال سمیت پنجاب کے تمام اضلاع کی ایل ایچ ویز،سینئرایم سی ایچ ٹیکنیشنررشریک ہوئیں۔ میزبانی کے فرائض شمیم فیصل،شبانہ ایوب،زرینہ منیر اورصائمہ بینش نے اداکیے۔مقررین نے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ ایم ایچ سی ٹیکنیشنرز محکمہ صحت میں ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتی ہیں جومعمولی معاوضہ کے باوجود اپناکام خوش اسلوبی سے سرانجام دے رہی ہیں۔پنجاب میں لیڈی ہیلتھ وزیٹرزکے ساتھ سوتیلی ماہ جیساسلوک کیاجارہاہے۔انہوں نے کہاکہ صرف چند اضلاع میں عرصہ40سال سے بی ایس 9لینے والی (ایل ایچ وی)کوبی ایس 12میں اپ گریڈکیاگیاہے ۔گیارہ پبلک ہیلتھ نرسنگ سکولز ،سی ای او ہیلتھ آفس کی سینئر ٹیکنیشنرز لاہور‘فیصل آباد‘چنیوٹ‘جہلم‘جھنگ‘ٹوبہ اورگورنمنٹ ڈسپنسریز کوگزشتہ 8سال ہوگئے سروس سٹرکچرملے ہوئے مگرابھی تک صحیح معنوں میں عملدرآمد نہیں ہوسکا۔انہوں نے وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزداراوروزیرصحت ڈاکٹریاسمین راشدسے مطالبہ کیاکہ صوبائی سطح پر ڈی جی نرسنگ کی طرح صوبائی سطح اورڈویژنل لیول پر ایل ایچ ویز کی سیٹ بنائی جائے ۔ضلعی سطح پر ڈسٹرکٹ انسپکٹروتحصیل انسپکٹرکی سیٹوں پر عملدرآمد کروایاجائے ۔لیڈی ہیلتھ وزیٹرکابنیادی سکیل بھی ایم ایچ ٹی اورایف ایم ٹی جن کے کورس کا دورانیہ بھی ڈیڑھ سال کاہے جبکہ ایل ایچ وی کے کورس کادورانیہ دوسال ہے اس بنیاد پر ایل ایچ وی کو گریڈ16دیاجائے ۔نرسنگ کی طرز پر تمام الاؤنس دیئے جائیں ۔ایل ایچ ویز کو کورسز کرواکر ترقی کاموقع دیاجائے۔ایل ایچ وی کو سینئرٹیکنیشنر ڈیکلیرکیاجائے اورسروس سٹرکچر میں ایم سی ایچ ٹیکنیشنرز کااپ گریڈیشن سکیل 12بنتاہے اوربی ایس 12سے چاردرجاتی فارمولاکے مطابق فی الفوررہ جانے والے اضلاع کو سروس سٹرکچردیاجائے۔انہوں نے کہاکہ گیارہ پبلک ہیلتھ سکولز کی سنیارٹی لسٹ مقامی سکول کے تحت بنائی جائے اورسروس سٹرکچر دیاجائے۔پی ایچ ایف ایم اورآئی آرایم سی ایچ کی تمام ایل ایچ ویز کو ریگولرکیاجائے اوراگرایم سی ایچ ٹیکنالوجی کے جائز مطالبات اورہونیوالی حق تلفی کاازالہ نہ کیاگیاتوایم سی ایچ ٹیکنالوجی سینئر کیڈرز(ایل ایچ وی ) احتجاج کرنے پر مجبورہوجائیں گی۔اس موقع پر آئندہ کا لائحہ عمل بھی طے کیاگیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں