125

میاں محمد اسلم کا بھارہ کہو میں چار سالہ قتل ہونے والے بچے کے والد سے ملاقات اور تعزیت

اسلام آباد(شاہدمحمود)جماعت اسلامی پاکستان کے نائب امیر اور سابق ممبرقومی اسمبلی میاں محمد اسلم نے کہا ہے کہ حکومت عوام کے جان و مال کے تحفظ میں ناکام ہوچکی ہے وزیراعظم عمران کے پڑوس میں چار سالہ معصوم عمر مختار کا غوا کے بعد قتل حکمرانوں کے لیے لمحہ فکریہ ہے،عمران خان کی ناک کے نیچے اس دلدوز سانحہ نے حکمرانوں کے ریاست مدینہ کے دعووں کی قلعی کھول دی ہے مجرموں کو قانوں کے کٹہرے میں لاکر قرار واقعی سزا دی جاے جماعت اسلامی ہمیشہ مظلوموں کے ساتھ رہی ہے ہم مختار راٹھور کے ساتھ ہیں مجرموں کو ڈھوک جیلانی کے سامنے گراونڈ میں سرعام پھانسی دی جاے تاکہ آہندہ کسی کو اس طرح کی حرکت کا موقع نہ مل سکے ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز چار سالہ عمر مختار کے والد مختار راٹھور کے گھر اظہار تعزیت کے موقع پر صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوے کیا اس موقع پرجے آء یوتھ آزادکشمیر گلگت بلتستان نثار احمد شاہق جماعت اسلامی  بہارہ کہو زون کے امیر سجاد عباسی غلام سرور تبسم سنیئر صحافی راجہ بشیر عثمانی  مہتاب اشرف،جے آئی یوتھ کے راہنما راجہ عبدالمتین وقاص امیر بھی موجودتھے  میاں اسلم نے بات چیت کرتے ہوے کہا کہ جماعت اسلامی معصوم عمرمختار کے والدین کے ساتھ کھڑی ہیاور انہیں انصاف دلانے تک چین سے نہیں بیٹھیں گے حکومت عوام کے جان ومال کیتحفظ کو یقینی بناے جس دور میں عوام کے جان ومال محفوظ نہیں ایسے حکمرانوں کے لیے ریاست مدینہ کے دعوے بے بنیاد ہیں انہوں نے کہا کہ حکمرانوں پر اس معصوم بچے کا قتل قرض ہے مقتول بچے کیقاتلوں کو سرعام پھانسی دیکر انصاف کا بول بالا کیا جاے انہوں نے مطالبہ کیا کہ خصوصی عدالت میں اس کیس کا ٹراہل کیا جاے اور جلد اس مقدمے کا فیصلہ کیا جاے جماعت  اسلامی مجرموں کو سزا دلانے تک چین سے نہیں بیٹھے گی اور  مقتول کے والد مختار راٹھور کے ساتھ کھڑی رہے گی قاتلوں کو عبرتناک سزا دی جاے تاکہ آہندہ کسی کو معصول پھول مسلنے کی جرات نہ ہوسکے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں